Header Ads

Us Ko Kisi Rafeeq Ki Hajat Nahi Rahi - Ghazal



جب اسکو مجھ سے کوئی بھی رغبت نہیں رہی 

مجھ کو بھی اس حسیں سے محبت نہیں رہی 



چھوڑا ہے جب سے ہم نے بزرگوں کا احترام
دنیا میں خود ہماری بھی عزت نہیں رہی 



اک دوسرے سے ملتے ہیں مقصد کے واسطے
بے لوث، بے غرض وہ رفاقت نہیں رہی



سب خون چوستے ہیں رعایا کا آج کل 
ہمدرد و غمگسار قیادت نہیں رہی



اسعدؔ جو میری ذات سے منسوب وہ ہوا
اس کو کسی رفیق کی حاجت نہیں رہی
A330Pilot کی طرف سے پیش کردہ تھیم کی تصویریں. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.