Header Ads

سیرۃالنبیﷺ | قسط نمبر 25



حرا کی خلوت سرائیاں۔۔۔
محبوب خداﷺ کی طبیعت عمر کےساتھ ساتھ تنہائی کی طرف مائل ہونے لگی۔ آپﷺ مضطرب اور بےچین سےرہنے لگے تو آپﷺ نےشہرکے ہنگاموں سےدور مکہ کےقریبی پہاڑ میں واقع غارحرا میں ٹھکانہ کیا۔ سرکار دوعالمﷺ یہاں پہنچے توطبیعت نےزیست کامزہ پایا۔ اضطراب وبےچینی نے سکون کادامن تھاما۔ حراکی تہائیوں نےفکرونظرکوجلا بخشی۔ یہاں ھادی برحق مستقبل کےعظیم بیغمبرنےخدا کی خدائی پر خالق کائنات کی کبریائی پر غورشروع کیا۔ قلب مبارک مالک حقیقی کی جانب متوجہ ہوا۔ سرکار دوعالمﷺ کئی کئی دنو کازاد راہ ساتھ لیتے اورحرا کی خلوت سرائیوں سےلطف اندوز ہوتے۔

پہلی وحی۔۔۔
معتکف حرا کی زندگی کاچالیسواں سال تھا۔ نبوت کی تاجپوشی کے مبارک لمحات جوں جوں قریب آرہےتھے آپﷺ عظمت ورفعت کی معراج پارہےتھے۔نیند کی حالت میں جو خواب دیکھتےصبح کوسچ ثابت ہوتا۔ غارحرا کےاندربرسوں کی عبادت وریاضت نےآپﷺ کادل منورکردیاتھا۔ غوروفکر انہماک واستغراق وجستجو کی کیفیات اوج کمال کوپہنچ گئی تھیں۔ نگاہیں رہ رہ کر آسمان کی طرف اٹھنے لگتیں۔ جبین نیاز میں سجدےتڑپنے لگتے۔ جب قلب وجگر خالق حقیقی کی محبت میں لبریز ہوگیا۔ تو اسی غار حرا میں جبریل امین حاضر خدمت ہوئے اورسلام شوق عرض کرنےکے بعدکہا! اقرا (پڑھئے) آپﷺ نےفرمایا ماانابقاری (میں پڑھاہوا نہیں) اس پرفرشتے نےپکڑکر اس زورسے دبایاکہ آپﷺ کومحسوس ہواکہ آپﷺ پسلیاں ٹوٹ جائیں گی۔ پھرفرشتےنےآپﷺ کوچھوڑدیا اورکہا! اقرا (پڑھئے) آپﷺ نے پھروہی جواب دیا۔ فرشتے آپﷺ کوپھرشدت سےبھینچا اورچھوڑدیا۔ تیسری مرتبہ فرشتےنے پھریہی عمل دھرایا اورکہا اقرا (پڑھئے) آپﷺ نے فرمایا ماذا اقراء (کیاپڑھوں؟) جبریل امین نےکہا
"اِقْـرأبِاسْمِ رٓبّـِکٓ الّـٓذِیْ خٓلٓقٓ• خٓلَقَ الْاِنْسٓانٓ مِنْ عٓلٓقٍ• اِقْرٓأ وٓرٓبّـُكٓ الْآکْرٓمُ• الّـٓذِیْ عَلّـٓمٓ بِالْقٓلٓمِ• عٓلّـٓمٓ الْاِنْسٓانٓ مٓالٓمْ یٓعْلٓم•"
فرشتےکا پڑھایاہوا زبان پرجاری ہوگیا۔ لوح دل پریہ الفاظ نقش ہوگئے۔ غنچہ دل نسیم وحی سےکھل گیا۔ ذھن کےدریچوں میں بہارنبوت آگئی۔ آمنہ کےدر یتیم کوتاج نبوت پہنادیاگیا۔ ویران حرا وحی کی بدولت نورنبوت سےجگمگا اٹھا۔ جبل نور کی قسمت جاگ اٹھی ان راستوں کےمقدر سنورگئے۔ میرے مصطفٰےکے قدموں نے ان گزرگاہوں کی مانگ میں خوش بختی کاسندور بھردیا۔
قدم پہ برکتیں نفس پہ رحمتیں
جہاں سےوہ شفیع عاصیاں گزرگیا
جہاں قدم نہیں پڑے وہاں ہےرات آج تک
وہیں وہیں سحر ہوئی جہاں جہاں گزرگیا
(جاری ہے)

مضمون نگار: مولانا ابو بکر صدیق

امام جامع مسجد طیبہ، کورنگی کراچی

A330Pilot کی طرف سے پیش کردہ تھیم کی تصویریں. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.