تازہ ترین

Post Top Ad

loading...

منگل، 22 دسمبر، 2015

کرسمس یا دیوالی وغیرہ پر مبارک باد دینا

السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ
سوال:۔ کیا کسی غیر مسلم کو ان کے کرسمس یا دیوالی وغیرہ پر مَیرِی کرسمس یا مبارک باد دینا صحیح ہے؟
الجواب حامدا و مصلیا
کرسمس ہو یا دیوالی،  یا غیر مسلموں کی کوئی بھی مذہبی عید یا تہوار ہو، مسلمانوں کیلئے  اس میں حاضر ہونا، ان جلسوں محفلوں میں شرکت کرنا یا انکی عبادت گاہوں میں جانا اور انکے ساتھ شرکت کرنا ہر گز جائز نہیں۔
اسی طرح اس موقع پر انکو اس تہوار کی تعظیم کی خاطر مبارک باد دینا یا انکو ہدایا دینا جائز نہیں،  بلکہ اگر اس سے انکے دین کی تعظیم مقصود ہو تو  اس میں کفر کا قوی اندیشہ ہے بلکہ بعض مشائخ نے ایسے شخص کو کافر کہا ہے، لہذا مسلمانوں پر واجب ہے کہ وہ کرسمس وغیرہ میں نصاریٰ کے ساتھ یکجہتی یا محبت کی غرض سے شرکت سے مکمل اجتناب کریں، ورنہ سخت گناہ ہوگا اور اس میں کفر کا بھی قوی اندیشہ ہے تاہم اگر ان جلسوں اور محفلوں میں شریک نہ ہو اور نہ ہی انکی عبادت گاہ میں حاضر ہو اور نہ دل میں انکے مذہب کی تعظیم مقصود ہو اور مبارک باد نہ دینے سے اسلام یا مسلمانوں سے تنفر کا اندیشہ ہو تو صرف مبارک باد کے طور پر خوشی کے ایسے کلمات کہہ دئے جائیں جو اس دن کی تعظیم پر مشتمل نہ ہوں۔ تو اسکی گنجائش معلوم ہوتی ہے۔ (ماخذہ التبویب 74/1422، 1520 بتصرف)




Post Top Ad

loading...