تازہ ترین

Post Top Ad

loading...

ہفتہ، 1 اگست، 2015

Quraan And Anti Muslim Conspiracy

قرآن کے اعجازات اور اسکی خصوصیات بیان کرنے بیٹھ جاؤں تو شاید یہ زندگی ناکافی ہے ۔مطلب یہ کہ زندگی ختم ہوجائے مگر اللہ اور اللہ کے کلام اور اسکے حبیب کی تعریف نہ ختم ہو،میں اپنے اصل موضوع پر آتا ہوں، میں نے ابتداء میں جو تحریف شدہ قرآن کے منظر عام پر لانے اور پھر برمنگھم میں قدیم ترین قرآنی نسخہ کے دریافت ہونے کی خبر سنائی یہ دونوں خبریں ، دو دن کے فرق کے ساتھ دنیا بھر کے میڈیا میں چھپی دکھائی گئی اور پھر خوب ہلہ گلا ہوا۔ پہلا سوال یہ ہے کہ یہ مغربی دنیا جو قرآن کو لے کر ہمیشہ سے متنازعہ بیانات دیتے آرہے ہیں اورناعوذ باللہ قرآن کی کچھ آیتوں کو نکالنے کے لئے جو بار بار دباؤ بناتے رہے اور جہاد کے نام پر قرآن و مسلمانوں کو بدنام کرتے رہے اور کررہے ہیں ، آخر ایک قدیم ترین نسخہ ملنے پر اتنے خوش کیوں ہیں، اور جو میڈیاہمیشہ مسلمانوں کی اچھائیوں کو چھپا کر ایک دو افراد کے یا تنظیموں کی کرتوت کو دکھا کر ہمیشہ بدنام کرنے کے درپہ رہا آخر اتنا کیوں اُچھل رہاہے ۔ اور پھر ایسے ہی موقع پر یہ قرآن منظر عام پر لایا گیاکہ دوسری جانب کذاب، ظالم ، دجال کا چیلہ ایک تحریف شدہ قرآن کو منظر عام پر لانے کے لئے فائنل آرڈر دے چکاہے ،کہیں ایسا تو نہیں کہ میڈیا اس خبر کو چھپانے کے لیے یہ گیم رچا ہو،یا پھر دنیا کو یہ دکھانے کے لیے دیکھئے ہم آپ کے قدیم ترین قرآن کے نسخے کے ملنے پر اتنی خوشی منارہے ہیں اس کو میوزیم میں رکھ رہے ہیں مگر آپ ہی کے دھرم کا ایک شخص اس کو ماننے کے لیے تیار نہیں اور وہ اپنے من پسند آیتیں رکھ کر ، اس کی ترتیب کو بدل کر پیش کررہاہے ۔ یا پھر ایسا تو نہیں قدیم ترین نسخہ صرف میوزیم تک محدود ہو اور جو ردو بدل کیا گیا ہے ا س پر عمل کرو۔سوال یہ بھی ہے کہ یہ نسخہ انگلینڈ پہنچا کیسے؟ کس سال مہینے دن اور تاریخ کو وہ یہاں پہنچا، اب تک منظر عام پر کیوں نہیں لایا گیا؟ کیا یہ لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ اس طرح کے نسخے کو پیش کرکے ہم خوش ہوجائیں گے؟ کیا مسلمان صرف قدامت پر یقین کرلیتا ہے؟ اس کو لکھنے والا کون ہے ؟ خیر یہ بات مسلمانوں کے لیے خوش آئند ہے کہ محققوں نے اسے تحریف سے پاک قرار دیا۔ مگر محض اس وجہ سے خوش ہوجائیں یہ ضروری نہیں کیوں کہ قرآن کے معجزات پر تو مسلمان کو ایمان و یقین ہے ، قرآن کا معجزہ یہ نہیں ہے کہ صدیوں پرانہ نسخہ ملا، کیوں کہ یہ ممکن ہے ،کیونکہ اسلامی تاریخ میں جن کاتبین وحی کا ذکر کیا گیا ہے ان کے اسماء گرامی کچھ اس طرح سے ہیں،سیرت ہشام کے مطابق انکی تعداد43تھی، ان میں سے عمر بن خطاب، عثمان بن عفان، علی ابن ابو طالب، زید بن ثابت، حارث بن ہشام ،حنظلہ بن الربیع، عبدا للہ بن سعد بن ابو سرح اورانصاری صحابی ابی ابن کعب جیسے جلیل القدر صحابہ کے نام شامل ہیں،ظاہر سی بات ہے انہوں نے لکھا ہوگا اور یہ نسخے بھی کہیں نہ کہیں ہوں گے، اس کا دریافت ہونا بھی صحیح بات ہے۔ اب تک کا سب سے پرانا قرآنی نسخہ حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ کے دور میں تیا ر ہونے والے قرآنی نسخوں کے کچھ نقول تھے ، جو 1972میں دریافت ہوئے تھے ، یہ بھی حجازی رسم الخط میں ہی تحریر کردہ ہے۔ جرمن کے ماہرین نے پروفیسر گیرڈبوین کی قیادت میں اس کی قدامت پر تحقیق کی تھی تو اس کو قدیم ترین نسخہ قرارد یا گیا یہ نسخہ یمن میں ابھی بھی موجود ہے ۔ مگر ماہرین کا ماننا ہیکہ یہ برمنگھم میں ملنے والا نسخہ اُس سے بھی زیادہ قدیم ہے ۔سب درست ہے ،مگر اس میں اتنی اُچھل کود کیوں،تحریف شدہ قرآن کو ظالم بشار الاسد ایک طرف منظر عام پر لانے کی بات کررہا ہے اور اُسی وقت اس طرح کی خبریں میڈیا میں آجاتی ہیں تاکہ عالم اسلام اور مسلمانوں کو اصل خبر سے دور رکھا جائے ۔ بھلا بتائیے جس پر مسلمان کو پہلے ہی سے ایمان و عقیدہ ہے وہ ایک قدیم نسخے کے دریافت ہونے پر اتنا خوش کیوں ہوگا؟خوشی تو تب ہوتی کہ جب آپ کو یہ نسخہ ملا تو فوری طور پر اسلام قبول کرکے قرآن کی حقانیت کو تسلیم کرتے؟ قدیم نسخے کا دریافت ہونا معجزہ نہیں بلکہ یہ کافروں اور مستشرقین کے لئے عبرت کا ساماں ہے کہ جس کا تم انکار کرتے رہے ہو، اس سے عبرت لو اور اللہ کے کلام کو مان لو، جو منظر عام لائی گئی ہے۔ اور اللہ تعالیٰ وقتاً فوقتاً اپنے قدرت کے ایسے مظاہر دکھاتا ہی رہتا ہے تاکہ انسان اپنے خالق کو پہنچان لے۔ قرآن کا معجزہ تو مسلمان اول دن سے دیکھتے آرہاہے ،کیا یہ قرآن کا معجزہ نہیں ہے کہ آج پوری دنیا میں قرآن کریم کے حفاظ کرام کروڑوں کی تعداد میں پائے جاتے ہیں، کیا یہ معجزہ نہیں کہ بینا تو بینا دنیا بھر میں سینکڑو ں کی تعدادمیں نابینا حفاظ و قراء کرام موجود ہیں، کیا اس کا یہ معجزہ نہیں ہے کہ دنیابھر میں آج سب سے زیادہ پڑھی جانے والی کتاب دنیا کے سب سے زیادہ زبانوں میں ترجمہ کی ہوئی کتاب قرآن مقدس ہے ۔ کیا اس کا یہ معجزہ نہیں ہے کہ سینے سے سینے میں منتقل ہونے والی کتاب بسم اللہ کے ب سے سورہ ناس کی س تک اُس کے آیت تک ایسے ہی ہے جیسے آپ ﷺ کے سینے مبارک پر اُتاری گئی تھی۔

Quraan And Anti Muslim Conspiracy

Quraan And Anti Muslim ConspiracySeedhi Baat With Ansar Azeez Nadwi | FikroKhabarTvUploaded by:Mohammad Zahid Azmi | CEO of Azmi GroupContact CEO: www.mzazmi.blogspot.comThanks To FikroKhabar

Posted by Azmi Islamic Zone on Thursday, 30 July 2015

Post Top Ad

loading...