Header Ads

میں آرہا ہوں | رمضان رحمتوں اور برکتوں کا مہینہ

جی ہاں دوستو! اسی لئے رمضان ہم سے مہمان بن کر مخاطب ہے کہ ’’میں آرہاہوں ‘‘تاجرو! میں کمائی کا مہینہ نہیں ہوں! نئے کپڑ ے سلوانے کا مہینہ نہیں ہوں، میں اس لئے نہیں آرہاہوں کہ تم عیدی خریدی کے نام پر پورا مہینہ بازار میں نکالدو، میں صرف تمہیں بھوکا رکھنے کے لیے نہیں آرہاہوں، عبادتوں میں دکھاوا کرو اس لئے نہیں آرہاہوں..زکاۃ اور فطرے کے نام پر نام ونمود بٹورو اس لئے نہیں آرہاہوں، افطار پارٹی کے نام پر فضول خرچی کرو اس لئے نہیں آرہاہوں، میں اس لئے نہیں آرہاہوں کہ تم روزہ رکھو اور پھر سارا سار دن سوئے رہو، روزہ رکھو اور فون سے چپک کر بیٹھ جاؤ، اس لئے نہیں آرہاہوں کہ افطاری کے موقع پر خوب پیٹ بھر کر کھاؤ اور عشاء اور تراویح کی نماز قضا کرکے خراٹے بھرو ،..میں تو آتا ہوں اپنے رب کی رحمتوں ، برکتوں اور مغفرتوں کی سوغات لے کر مگر تم اس کو حاصل کرنے کے بجائے تجارت کے حساب و کتاب میں لگ جاتے ہو، روزہ رکھ کر یوں سمجھتے ہو کہ میں نے تیر مارلیا، ارے میں تو سال بھر کے تمہارے گناہوں کو دھونے کے لیے اللہ کی طرف سے مغرفت کا پروانہ بن کرآتا ہوں مگر تم روزہ رکھ کر بھی گناہوں سے باز نہیں آتے، نوجوانو! ناجائز عشق رمضان سے پہلے بھی ناجائز او ر اب بھی مگر تم تو رمضان میں کچھ کام نہ ہونے کا بہانہ بنا کر سار ا سار ا دن موبائل پر عشق بازی کرتے رہ جاتے ہو، پھر روزہ رکھ کر یہ گناہ کیسا؟؟ غلط ویڈیوز اور موسیقی سننا ہر وقت حرام مگر یہاں تو روزے کی حالت میں یا تو سوکر یا پھر موبائل میں گذارا ہوتاہے ، میں اس لئے تو نہیں آیا۔ میں رحمٰن کی رحمت بن کر غفار کی مغفرت بن کر آیا تھا مگر تم نے تو میری رتی برابر میزبانی نہیں کرتے اور جو کرتے ہیں میں قربان جاؤں اُن پر ، میرا ایک دن گذرتا ہے اور وہ افسوس کرتے رہ جاتے ہیں کہ ایک د ن گذرگیا اور پھر رات دن قرآن کی تلاوت سے، تسبیح اور نمازوں سے، دعاؤں اور التجاؤں سے اپنے رب کو منانے کی کوشش کرتے ہیں، ہر پل وہ اپنے خالق سے اپنے گناہوں کی شکایت کرتے ہیں، اور رحمتیں لوٹتے ہیں برکتیں حاصل کرتے ہیں، مغفرت کے پروانے اپنے نام کرلیتے ہیں، میں آتا بھی اسی لئے ہی ہوں ،تم بھول مت جانا.. میں جب تمہارے آنگن میں قدم رکھوں گا تو میرا ہر لمحہ ہزاروں لمحوں سے بہتر ہے کیوں کہ میں ایسا مہینہ جس میں ہرلمحہ اللہ کی رحمت برستی ہے ۔میں کبھی تم کو روزہ بن کر آواز دیتا ہوں، کبھی افطاری کی دعا بن کر، کبھی سحری سے تھوڑی دیر قبل اُٹھ کے اپنے رب سے التجاکرکے اُسے منانے کی درخواست کرتاہوں، کبھی رحمت کے دس دن دیتا ہوں تو کبھی مغفرت کے اور کبھی جنت و جہنم کی خلاصی کے دعاکے لیے دس دن، تم مانتے نہیں ہو؟ارے ہوش میں آؤ بھائی ’’میں آرہاہوں ‘‘ کہا کھو گئے ہو؟ گیارہ ماہ گناہوں کی دلدل میں ڈوبے رہنے کے بعد اپنے گناہوں کو بخشوانے کے لیے میرے رب نے تم تک بھیجا تو تم روزے کے نام پر خالی پیٹ رہ کر وہی جھوٹ کے انبار، غیبت کے بازار، بات بات پر تکرار، عید خرید کے نام پر بیوی سے ان بن، پڑوسی سے لاتعلقی، ارے ہوش میں آؤ،اگر میں چلاگیا تو موقع ہاتھ سے چلا جائے گااور لوٹنے کے لیے گیارہ مہینے لگ جائیں گے اور زندگی کا کوئی بھروسہ نہیں.

میں آرہا ہوں| رمضان رحمت و برکت کا مہینہ

جی ہاں دوستو! اسی لئے رمضان ہم سے مہمان بن کر مخاطب ہے کہ ’’میں آرہاہوں ‘‘تاجرو! میں کمائی کا مہینہ نہیں ہوں! نئے کپڑ ے سلوانے کا مہینہ نہیں ہوں، میں اس لئے نہیں آرہاہوں کہ تم عیدی خریدی کے نام پر پورا مہینہ بازار میں نکالدو، میں صرف تمہیں بھوکا رکھنے کے لیے نہیں آرہاہوں، عبادتوں میں دکھاوا کرو اس لئے نہیں آرہاہوں..زکاۃ اور فطرے کے نام پر نام ونمود بٹورو اس لئے نہیں آرہاہوں، افطار پارٹی کے نام پر فضول خرچی کرو اس لئے نہیں آرہاہوں، میں اس لئے نہیں آرہاہوں کہ تم روزہ رکھو اور پھر سارا سار دن سوئے رہو، روزہ رکھو اور فون سے چپک کر بیٹھ جاؤ، اس لئے نہیں آرہاہوں کہ افطاری کے موقع پر خوب پیٹ بھر کر کھاؤ اور عشاء اور تراویح کی نماز قضا کرکے خراٹے بھرو ،..میں تو آتا ہوں اپنے رب کی رحمتوں ، برکتوں اور مغفرتوں کی سوغات لے کر مگر تم اس کو حاصل کرنے کے بجائے تجارت کے حساب و کتاب میں لگ جاتے ہو، روزہ رکھ کر یوں سمجھتے ہو کہ میں نے تیر مارلیا، ارے میں تو سال بھر کے تمہارے گناہوں کو دھونے کے لیے اللہ کی طرف سے مغرفت کا پروانہ بن کرآتا ہوں مگر تم روزہ رکھ کر بھی گناہوں سے باز نہیں آتے، نوجوانو! ناجائز عشق رمضان سے پہلے بھی ناجائز او ر اب بھی مگر تم تو رمضان میں کچھ کام نہ ہونے کا بہانہ بنا کر سار ا سار ا دن موبائل پر عشق بازی کرتے رہ جاتے ہو، پھر روزہ رکھ کر یہ گناہ کیسا؟؟ غلط ویڈیوز اور موسیقی سننا ہر وقت حرام مگر یہاں تو روزے کی حالت میں یا تو سوکر یا پھر موبائل میں گذارا ہوتاہے ، میں اس لئے تو نہیں آیا۔ میں رحمٰن کی رحمت بن کر غفار کی مغفرت بن کر آیا تھا مگر تم نے تو میری رتی برابر میزبانی نہیں کرتے اور جو کرتے ہیں میں قربان جاؤں اُن پر ، میرا ایک دن گذرتا ہے اور وہ افسوس کرتے رہ جاتے ہیں کہ ایک د ن گذرگیا اور پھر رات دن قرآن کی تلاوت سے، تسبیح اور نمازوں سے، دعاؤں اور التجاؤں سے اپنے رب کو منانے کی کوشش کرتے ہیں، ہر پل وہ اپنے خالق سے اپنے گناہوں کی شکایت کرتے ہیں، اور رحمتیں لوٹتے ہیں برکتیں حاصل کرتے ہیں، مغفرت کے پروانے اپنے نام کرلیتے ہیں، میں آتا بھی اسی لئے ہی ہوں ،تم بھول مت جانا.. میں جب تمہارے آنگن میں قدم رکھوں گا تو میرا ہر لمحہ ہزاروں لمحوں سے بہتر ہے کیوں کہ میں ایسا مہینہ جس میں ہرلمحہ اللہ کی رحمت برستی ہے ۔میں کبھی تم کو روزہ بن کر آواز دیتا ہوں، کبھی افطاری کی دعا بن کر، کبھی سحری سے تھوڑی دیر قبل اُٹھ کے اپنے رب سے التجاکرکے اُسے منانے کی درخواست کرتاہوں، کبھی رحمت کے دس دن دیتا ہوں تو کبھی مغفرت کے اور کبھی جنت و جہنم کی خلاصی کے دعاکے لیے دس دن، تم مانتے نہیں ہو؟ارے ہوش میں آؤ بھائی ’’میں آرہاہوں ‘‘ کہا کھو گئے ہو؟ گیارہ ماہ گناہوں کی دلدل میں ڈوبے رہنے کے بعد اپنے گناہوں کو بخشوانے کے لیے میرے رب نے تم تک بھیجا تو تم روزے کے نام پر خالی پیٹ رہ کر وہی جھوٹ کے انبار، غیبت کے بازار، بات بات پر تکرار، عید خرید کے نام پر بیوی سے ان بن، پڑوسی سے لاتعلقی، ارے ہوش میں آؤ،اگر میں چلاگیا تو موقع ہاتھ سے چلا جائے گااور لوٹنے کے لیے گیارہ مہینے لگ جائیں گے اور زندگی کا کوئی بھروسہ نہیں

Posted by ‎اعظمی اسلامک زون‎ on Thursday, 11 June 2015
A330Pilot کی طرف سے پیش کردہ تھیم کی تصویریں. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.