تازہ ترین

Post Top Ad

loading...

جمعرات، 15 جنوری، 2015

سیرۃ النبیﷺ│قسط نمبر 3

اعلٰی حسب نسب۔۔۔
سیرت یاسوانح کاآغاز ہمیشہ شجرہ نسب سے ہوتاہے، سرکار دوعالمﷺ کاشجرہ نسب سب سے اعلٰی وافضل تھاکہ آپﷺ کے سلسلہ نسب میں زانی یازانیہ تودرکنار کوئی ناشکرا مرد یاناشکری عورت بھی نہیں ہوگزری۔
سرکار دوعالمﷺ کواپنے حسب نسب پر فخرتھا۔ ایک موقع پر ارشاد فرمایا
"عَنْ آنٓسٍ قٓالٓ قٓرٓاءٓ رٓسولٓ اللهِ ﷺ لٓقٓدْجٓائٓكُمْ رٓسُوْلٌ مِنْ آنْفَسِكُمْ بِفٓتْحِ الْفٓاءِ وٓقٓالٓ آنٓاآنْفٓسِكُمْ نٓسْباًوصٓهْراً آوْحٓسْباً لٓيْسٓ فِي آبٓائي من لدن آدم سفاح كلنا نكاح"
حضرت انسؓ سے روایت ہے کہ رسول خداﷺ نےاس آیت کویعنی"لقدجائکم الخ" فا پرزبر کے ساتھ پڑھا جس کے معنی یہ ہیں کہ بے شک تمہارے پاس تم میں سے سب سے اشرف وافضل اور سب سے زیادہ نفیس خاندان سے اللہ کے رسول آئے۔ اس آیت کی تلاوت کے بعد آپﷺ نے فرمایا کہ میں بااعتبار حسب ونسب تم سب سے افضل وبہتر ہوں۔ میرے آباؤاجداد میں حضرت آدمؑ سے اب تک کسی نے زنا نہیں کیا سب کانکاح ہے۔

آنحضرت ﷺ کانسب مبارک۔۔۔
محمدﷺبنعبدااللهبنعبدالمطلببن ہاشمبنعبدمنافبن قُصٓی بنکِلاببن مُرّہ بنکعببن لُوَیبنغالب بن فہر بن مالکبن نظربنکنانہبن خزیمہبن خزیمہبن مُدرِکہبن الیاسبن مُضربن نزاربن معدبنعدنان بن اود بن مقوم بن ناجوربن تیرح بن یعرب بن یشجب بن نابت بن اسماعیلؑ بن ابراھیمؑبن تارخ بن ناحوربن ساروغ بنارعوابن فانح بنعابر بن شالخ بن ارفخشدبن سام بن نوحؑ بن لامک بن متوشلخ بن ادریسؑ یزد بن مھلیل بن قنیل بن یانش بن شیثؑ بن آدم علیہ السلام۔

آنحضرتﷺ کاخاندان۔۔۔
سرکار دوجہاںﷺ کاخاندان اعلٰی خاندان تھا۔ جہالت اور کفروشرک کے اُس دور میں آپﷺ کے آباؤ اجداد نے لوگوں کونیکی کادرس دیا۔ لوگوں کو برے رسم ورواج سے منع کیا۔ آپﷺ کے آباؤاجداد سید تھے وجیہہ، شجاع اور بہادر تھے اہم مناصب اور مراتب والے تھے اور سب سے بڑھ کر یہ کہ عرب کی مثبت خوبیوں کے مالک تھے۔ آپﷺ نے فرمایا کل دنیامیں عرب سب سے افضل ہیں۔ عرب میں بنوکنانہ، بنوکنانہ میں سے بنو ہاشم، بنوہاشم میں سے عبدالمطلب عبدالمطلب سے میں محمد الرسول اللہﷺ۔
(جاری ہے)
مضمون نگار:۔ محمدابوبکرصدیق
پتہ:۔ کراچی│پاکستان
رابطہ:۔ مضمون نگار کی اجازت کے بغیر برقی پتہ یا موبائل نمبر شائع نہیں کیا جاتا۔

Post Top Ad

loading...