Header Ads

سیرۃ النبیﷺ│قسط نمبر 2

ایک مسلمان کے لئے اپنے خاندان، آباؤ اجداد اور خود اپنے بارے میں جاننااتناضروری نہیں جتناکہ اپنے پیارے پیغمبرﷺ
کے بارے میں جاننا ضروری ہے۔
آپﷺ محبوب خدا ہیں، سرتاج الانبیاء ہیں، وجہِ تخلیقِ کائنات ہیں۔ ساری کائنات کی گل ریزیاں اور رعنائیاں آپﷺ کے دم قدم کی مرہون منت ہیں۔

یہ سب رعنائیاں تھیں اک وجود پاک کی خاطر
یہ نقش آرائیاں تھیں سید لو لاک کی خاطر

دنیا میں بڑے بڑے انسانوں کے حالات و واقعات، ارشادات و فرمودات اور پندو نصائح چنددنوں یاچند مہینوں میں بیان ہوجائیں گے لیکن یہ انفرادیت صرف سرکار دو عالمﷺ کی حیات طیبہ اورسیرت پاک کو حاصل ہے کہ وہ چودہ سو برس سے بیان کیے جانے کے باوجود بھی ختم نہیں ہوئی اور نہ ہی قیامت تک ختم ہوگی۔
اس پاکیزہ موضوع پر خطیبوں نے سارا زورِ بیاں صرف کیا، مفسرین نےعلم کے موتی نچھاور کئے، شاعروں نے منقبت اور مدحت میں انتہاء کردی، ہزاروں مقالے لکھے اور پڑھےگئے مگرسرکار دوعالمﷺ کی سیرت طیبہ ایسا دائمی موضوع ہے تمام عمر لکھنے اور بیان کرنے والوں نے اپنی کم مائیگی کااظہار توکیاہے مگر انسانی زبان سے اس عظیم المرتبت پیغمبرﷺ کی شان بیان کرنے سے عاجز رہے۔
سیرت النبیﷺ ایسا موضوع بیکراں ہےکہ صاحبِ کشور ونشاط، جامع کمالات، پیکر رحم وکرم نبیﷺ کے ذکرسے قلب وجگرکو سکوں، آنکھوں کوٹھنڈک، خیالات کو بانکپن، زبان کوحلاوت، فکرونظر کوجلاء، نگاہوں کوحیااور روح کوشفاء ملتی ہے۔
مختصر یہ کہ ایک گناہ گار انسان کو اپنے سیاہ نامۂ اعمال کے دھونے کے لیے ابرِرحمت کے چند قطرے میسر آنے کازریں موقع نصیب ہوتا ہے کیونکہ حضور اقدسﷺ کی ذات اقدس مسلمانوں کے لیے سرمایۂ افتخار اور سرمایۂ حیات ہے۔
دردل مسلم مقام مصطفٰے است
آبروئے  ما  زنام مصطفٰے است
(جاری ہے)
مضمون نگار:۔ محمدابوبکرصدیق
پتہ:۔ کراچی│پاکستان
رابطہ:۔ مضمون نگار کی اجازت کے بغیر برقی پتہ یا موبائل نمبر شائع نہیں کیا جاتا۔
A330Pilot کی طرف سے پیش کردہ تھیم کی تصویریں. تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.